پلا کا پلا بھاری نہ رہا

سیدہ کنول زیدی